August 17th, 2022 (1444محرم19)

جامعات المحصنات پاکستان


مسلمانوں کی چودہ سو سالہ تاریخ میں دینی مدارس نےعالم اسلام میں بہت ہی قابل قدر شخصیات پیداکیں۔ ان جامعات نے امت کی رہنمائی وقیادت کرتے ہوئے ہرمحاز پردرپیش چیلنجز کا بھرپور مقابلہ کیا۔
ٰیہ ایک حقیقیت ہے کہ ایک پاکیزہ معاشرے کے قیام میں خواتین کا کرداربےحد اہم ہےاس مقصد کے حصول کے لیے جامعات المحصنات پاکستان کا قیام عمل میں لایا گیا جوکہ دینی اورعصری علوم کا حسین امتزاج ہے۔اس وقت جامعاتالمحصنات کے تحت ملک بھر میں۹۱ ادارے قائم کیئے جا چکے ہیں جہاں طا لبات کواپنے ماحول میں دینی اورعصری علوم سے روشنا س کرایا جاتا ہے جوان کو زندگی کےاصل مقصد سےآگاہ کر تاہے یہی جامعات المحصنات کے قیام کا مشن ہے کہ:
"ہترین معاشرے کے قیام کے لئے ایسی باعمل مسلمان طالبات تیارکر ناجودینی اورعصری علوم سےآراستہ ہوں اوراپنے دائرہ کار میں مثالی خاتون کا کردارپیش کریں“۔
اغراض ومقاصد: 
جامعات المحصنات درج ذیل اغراض ومقاصد کے تحت اپنے فرائض سرانجام دے رہی ہیں۔
٭دینی وجدید علوم کے امتزاج سے طالبات کی فکری وعملی صلاحیتوں کی نشونما کرنا۔
٭اسلامی معاشرے کے قیام کے لیے ا ن صلاحیتوں کا استعمال کرنا ۔
٭طالبات کے صحت مند ذہنی جسمانی نشونما کے لیے مثبت ہم نصابی سرگرمیاں منعقد کرنا اوران کے ذریعے تحریری،تقریری اور تخلیقی صلاحیتوں کو بیدار کرنا۔
نصاب
جامعات المحصنات پاکستان کا نصاب درج ذیل پر مشتمل ہے۔
٭عامہّ، خاصہ،عالیہ، عالمیہ
٭اس کے علاوہ سا لانہ دورہ ء تفسیر القران، حفظ وناظرہ بھی نصاب کے لازمی جزو ہیں۔
ہم نصابی سرگرمیاں
  طالبات کی ذہنی جسمانی نشونماکے لیے مثبت ہم نصابی سرگرمیاں کروائی جا تی ہیں جو درج ذیل ہیں۔

*ادبی نشتیں (جوطالبات کی تحریری صلاحیتوں کو پراون چڑھاتی ہیں)
 *مطالعاتی دوروں اورسیرو تفریح کا اہتمام
 *سالانہ میگزین کا اجراء
*کمپیوٹر کوسرز
*فرسٹ ایڈ کورس اورسول ڈیفینس ٹریننگ
*معروف اسکالرز کے لیکچر
*کوکنگ، سلائی کڑھائی کلاسز
*خطاطی
جامعات المحصنات پاکستان کے مرکزی شعبہ جات میں شعبہ تر بیت، شعبہ تشہیروترویج،شعبہ تحقیق،شعبہ نصاب وامتحانات، شعبہ کوالٹی انشورس،شعبہ مالیات اور شعبہ انفارمیشن ٹیکنالوجی شامل ہیں۔