October 22nd, 2021 (1443ربيع الأول16)

اسلامی جمیعت طالبات نئی نسل کو سنوارنے اور نوجوان نسل کو اپنے مقصد حیات سے آشنا کرنے کی عظیم تحریک ہے، دردانہ صدیقی

حلقہ خواتین جماعت اسلامی پاکستان کی سیکریٹری جنرل دردانہ صدیقی نے اسلامی جمیعت طالبات کے 52 ویں یوم تاسیس کے موقع پر مبارک باد دیتے ہوئے یہ پیغام دیا کہ اسلامی جمیعت طالبات محض ایک تنظیم ہی نہیں بلکہ  یہ نئی نسل کو سدھارنے، بنانے اور سنوارنے اور نوجوان نسل کو اپنے مقصد حیات سے آشنا کرنے کی عظیم تحریک ہے۔اس کا 52 سال کا سفر غلبہ دین کی جدوجہد کا لازوال سفر ہے۔ جمیعت طالبات کا یہ سفر دعوت و عزیمت، تازہ دم جذبوں، انتھک جدوجہد اور بے لوث قربانیوں کی داستانوں سے پر ہے۔ اقامت دین کی اس جدوجہد میں اسلامی جمیعت طالبات نے بصیرت قرآن، محبت و اطاعت اللہ و رسول صلی اللہ علیہ وسلم  کو زاد راہ بنا رکھا ہے۔فکری اساس کی مضبوطی، دعوت و عزیمت کی تربیت، قرآن و سنت کی تعلیمات سے آگاہی، عزم و حوصلہ اور بہترین ساتھیوں کی رفاقت جیسی نعمت، جمیعت کی میراث ہیں۔جمیعت وہ تنظیم ہے جو طالبات کے ذہنوں کو قرآن و سنت کی بنیاد پر استوار کرنے اور انہیں مادر پدر آزاد تہذیب سے بچا کر اسلامی تہذیب سے وابستہ کرنے کے لئے سر گرم عمل ہےاس لحاظ سے بلا شبہ ظلمتوں کے اس دور میں یہ امید کی ایک کرن ہے۔تعلیمی اداروں میں طالبات کی تیزی سے بڑھتی ہوئی تعداد اور اتنی ہی تیزی سے بڑھتے ہوئے چیلنجز موثر حکمت عملی کا تقاضا کرتے ہیں۔ موجودہ دور میں ضرورت اس بات کی ہے کہ اپنے کردار اور اخلاق کے ذریعے لوگوں کے دلوں کو فتح کیا جائے، علم و دلیل کی بنیاد پر شائستہ انداز میں اپنے پیغام کو پیش کیا جائے اور بھٹکتی انسانیت کو آگے بڑھ کر سینے سے لگایا جائے،اپنے دائروں کو وسعت دی جائے اور دعوت دین کو حکمت کے ساتھ پیش کیا جائے۔آج اسلامی جمیعت طالبات کو اپنی تاریخ کا بڑا چیلنج درپیش ہے مادہ پرستی، بے مقصدیت، نمودونمائش، بے حیائی، وقت کا ضیاع اور سماجی بے راہ روی کا جبر بڑے معرکے ہیں۔اگر ماضی کی طرح آج بھی اسلامی جمیعت طالبات کی تحریک بصیرت قرآن سے مزین اور نبی آخرالزماں صلی اللہ علیہ وسلم  کی محبت سے شاداب ہو گی اور دعوتی دائرہ کار میں بریشم کی طرح نرم اور رزم حق و باطل میں فولاد کی طرح مضبوط ہو گی، تو ان شاء اللہ وقت کا طاغوت بھی ہمیشہ کی طرح ذلیل ہوگا، رحمت خداوندی شامل حال رہے گی، اللہ کا حکم سر بلند ہوگا اور باطل کا کلمہ سرنگوں ٹہرے گا۔
 آخر میں ، میں یہ کہنا چاہوں گی کہ یہ ایک مسلم حقیقت ہے کہ بلاشبہ جمیعت کی باشعور طالبات معاشرے کے لیے امید کی کرن اور امت مسلمہ کا سرمایہ ہیں لہذا مستقبل میں اس سرمائے کی آبیاری کے لئے نظریاتی ہم آہنگی رکھنے والی تحریک کے ساتھ ذیادہ سے ذیادہ قربت آپ کی تنظیم کے لئے ان شاءاللہ تقویت کا باعث ہو گی ۔ اللہ رب العالمین سے دعا ہے کہ صالح طالبات کا یہ قافلہ دعوت دین، خدمت طالبات اور سالمیت پاکستان کی شاندار جدوجہد کو اسی طرح آگے بڑھاتا رہے اور ملک و ملت کے مستقبل کو اسلام اور نظریہ پاکستان سے جوڑنے کا کردار ادا کرتا رہے۔ آمین۔