February 27th, 2021 (1442رجب15)

جے آئی یوتھ وومن ونگ کے تحت واؤ وومن کانفرنس و مذاکراہ / ماہرین و اہم شخصیات کی شرکت 

  معاشرے میں معتدل رجحانات پروان چڑھانے کی ضرورت ہے،نوجوان نسل کو سماجی دباؤ اور چیلنجز کا سامنا ہے جس کی وجہ سے ان کی صلاحیتیں انفرادی و اجتماعی زندگی  کے لیے فائدہ مند ثابت نہیں ہوتیں۔یہ بات ڈاکٹر مہ جبین اختر نے وی ٹرسٹ آفس کراچی میں جے آ ئی یو تھ کراچی  کے تحت منعقد ہونے والی ”واؤ وومن کانفرنس“ میں گفتگو کرتے ہوئے کہی۔ کانفرنس میں مختلف تعلیمی اداروں سے وابستہ نوجوان طالبات، وورکنگ وومن اور نوجوا ن خواتین نے شرکت کی۔ علاوہ ازیں کانفرنس میں  ایک مذاکرہ بھی ہوا جس میں  ماہر نفسیات،ٹیکساس یونیورسٹی سے سندیافتہ ڈاکٹر مہ جبین،ڈائریکٹر نیورو کئیرکراچی نفسیات اسپتال و ڈائریکٹر ٹریننگ اینڈ مینجمنٹ ڈاکٹر ماہ رخ کے علاوہ ماہر تعلیم،بلاگر،شاعرہ،ممبر حریم ادب نیر کاشف ملک، کلینکل سائیکالوجسٹ، سند یافتہ یوتھ کاؤنسلر بینش ضیاء سمیت دیگر نے اظہار خیال کیا۔مذاکرے میں  پاکستانی معاشرے میں طالبات اور خواتین کے مسائل، شرعی اور سماجی اختیارات،نوجوان لڑکیوں کے شادی سے قبل اور بعد کے نفسیاتی مسائل، نفسیاتی دباؤ اور ان کے حل پر سیر حاصل گفتگو کی گئی۔اس موقع پر شرکاء کی جانب سے اٹھائے  گئے سوالات کے تسلی بخش جوابات دیے گئے۔واؤ وومن کانفرنس میں صدر جے آئی یوتھ پاکستان کوثر مسعود اور جماعت اسلامی کراچی حلقہ خواتین کی ناظمہ  اسماء سفیر نے خصوصی شرکت کی۔کانفرنس سے اختتامی خطاب کرتے ہوئے صدر جے آئی یوتھ کراچی عذرا سلیم نے شرکاء کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ جے آئی یوتھ یہ یقین رکھتا ہے کہ نوجوان خواتین معاشرے کا سرمایہ ہیں۔ہم  اس سرمائے کو اپنے درمیان پا کر اور اس کی راہنمائی کرنے میں فخر و انبساط محسوس کرتے ہیں۔انہوں نے واؤ وومن کانفرنس کو سہ ماہی بنیاد پر جاری رکھنے کا اعلان بھی کیا۔