January 26th, 2021 (1442جمادى الثانية12)

 جامعات المحصنات کے قیام کا مقصد ایسی با عمل طالبات کی تیاری ہے جو دینی و عصری تعلیم سے آراستہ ہوں دردانہ صدیقی 

انفرادی اور اجتماعی زندگیوں میں دین برحق کی تعلیمات پر عمل ہی ایمان کی تکمیل کا راستہ ہے .  ہر دور کے اکابرین نے نصب العین کے حصول کی مختلف جہتوں پر غور کیا اور علم و تدبر کی نئ راہیں نکالیں جماعت اسلامی کے شعبہ تعلیم کا مقصد انقلاب بذریعہ تعلیم ہے ان خیالات کا اظہار سیکرٹری جنرل حلقہ خواتین جماعت اسلامی پاکستان دردانہ صدیقی نے جامعات المحصنات کے زیر اہتمام منعقدہ مشاورتی فورم سے خطاب کے دوران کیا-

انہوں نے کہا کہ جامعات المحصنات کے قیام کا مقصدایسی با عمل طالبات کی تیاری ہے جو دینی و عصری تعلیم سے آراستہ ہوں اور  معاشرتی زندگی میں سوسائٹی کے اندر ایک مثالی خاتون کا کردار پیش کر سکیں - اورعملی زندگی میں تعلیم وتربیت سے مزین خاندان کی محافظ بننے کی صلاحیت رکھتی ہوں- طالبات کو دینی و عصری تعلیم سے مزین کرنے کا مقصد طالبات کے ذریعے دعوت و تبلیغ کے کام کو آگے بڑھانا ہے - جماعت اور ادارے کے باہمی ربط کے بغیر یہ ممکن ہی نہیں - 

انہوں نے مزید کہا کہ دسمبر کا مہینہ قومی تاریخ کے اہم واقعات اور سانحات کا اک تسلسل ہے جس سے سبق سیکھنے اور نظریہ پاکستان کے عزم کو دھرانے کی ضرورت ہے -ہمیں جہد مسلسل اور اخلاص کے ساتھ اپنا فرض نبھانا ہے  ہماری منزل اللہ کی رضا اور اسلامی انقلاب ہےاور ذریعہ انقلاب دراصل اسلامی پاکستان کا حصول ہے -

عورت کے حقوق  اور دائرہ کار پر بات کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عورت کے حقوق کی بات کرنے والی این جی اووز عورت کی آزادی کا نعرہ لگاتی ہیں لیکن اسی نعرے کے ذریعے عورت کے حقوق کی پامالی کا عمل شروع ہو جاتا ہے ورنہ عورت کےحقوق بھی اسلام نے ہی متعین کئے ہیں اور عورت کی اصل آزادی  بھی اسلامی دائرہ کار کی متعین کردہ حدود میں ہے  -