April 21st, 2019 (1440شعبان15)

تربیت کا آغاذ اپنی ذات سے اور نفس کی نگہبانی سے ہوتا ہے‘عطیہ نثار

تحریک کا سرمایہ انسانہیں جو بنے بنائے نہیں ملتے۔ سرمایہ ہمیشہ تیار کیا جاتا ہے جو ہمہ گیر تربیت سے ممکن بنتا ہےتربیت کا آغاذ اپنی ذات سے اور نفس کی نگہبانی سے ہوتا ہے ۔ناظمہ صوبہ سندھ عطیہ نثار نے حیدر آباد گو ٹھ سولنگی مین جاری ایک روزہ تربیت گاہ کے چوتھے و آخری سیشن میں کہی اس موقع پر ان کے ہمراہ ناءیب ناظمات سندھ رخشندہ منیب‘عظمی عمران۔شگفتہ ابراھیم۔عائشہ ودود ۔عظمی اظہار۔اور نگران شعبہ عشرت مظہر عالیہ شمیم وعطیہ لاکھانی بھی موجود تھی.عطیہ نثار نے مزید کہاجامع تربیت کے اجزا روحانی تربیت۔علمی وفکری تربیت اور جسمانی تربیت ہے۔جماعت اسلامی کامشن دین کے غلبہ کے لیے مقدور بھر کوشیشیں کرنا ہیے۔امریکہ ومغرب نے عالم اسلام پر جنگ مسلط کر رکھی ہیےاسلامی تحریکیں مسائل و مصائب سے دوچار ہیں ہمیں اپنی بنیادوں کو مضبوط کرتے ہوئے سیکولر ازم ولبرل ازم کے خلا ف متحد ہو کرغلبہ اسلام کے لیےمتحد ہونا ہے علاوہ ازیں تربیت گاھ سے نائب ناظمہ شگفتہ ابراھیم نے میرا گھر میری جنت کے موضوع پر اپنے خطاب میں اسلامی گھر کی خصوصیات پیش کیں ۔ عظمی عمران نے کہا اخلاص کے ساتھ احسان کا درجہ مومنانہ صفت ہیے ہر کام جو خوشنودی رب کے لیے مثبت سوچ کے ساتھ کیا جائےاعمال صالح ہیے.